ملزم کی فائرنگ سے اے ایس ائی شبیر ضیاء شہید، نماز جنازہ پولیس لائن میں ادا



إِنَّا لِلّهِ وَإِنَّـا إِلَيْهِ رَاجِعونَ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کل مورخہ 16.11.2016 کو صبح تقریباً گیارہ بجے فیصل آباد پولیس کے آفیسر اے ایس آئی محمد شبیر ضیاء ملزم ابرار ولد تاج کو سنٹرل جیل بند کروانے جارہے تھے کہ مکوانہ کے قریب ملزم نے شبیر ضیاء سے پسٹل چھین کر فائرنگ کردی جس سے اے ایس ائی شبیر ضیاء موقع پر ہی شہید ہوگئے جبکہ ملزم ابرار ہتھکڑی سمیت موقع سے فرار ہوگیا ۔وقوعہ کی اطلاع ملتے ہی سی پی او فیصل آباد افضال احمد کوثر نے مفرورملزم کی گرفتاری کیلئے ایس پی جڑانوالہ کی سربراہی میں سپیشل ٹیم تشکیل دی ، جس نے جائے وقوعہ کے قریب کمادکو گھیرے میں لے کر ملزم کی تلاش شروع کردی،اسی دوران اچانک ملزم ابرار نے کماد کے اندر سے پولیس پارٹی پر سیدھی جان لیوا فائرنگ شروع کردی ،پولیس پارٹی نے بھی حفاظت حق خود اختیاری کے تحت جوابی فائرنگ کی جس سے ملزم ابرارزخمی ہوگیا۔ ملزم کو برائے علاج معالجہ ہسپتال پہنچایاگیا جہاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہوگیا۔ شہید آفسیرکا نماز جنازہ تمام سرکاری اعزاز ات کے ساتھ رات 12 بجے پولیس لائن میں ادا کیا گیا جس میں سی پی او فیصل آباد افضال احمد کوثر سمیت ایس ایس پی آپریشنز محمدمعصوم ،ایس پی جڑانوالہ نجیب اللہ پدرانی، دیگر اعلی پولیس افسران و معززین علاقہ نے شرکت کی۔ اس موقع پر سی پی او فیصل آباد نے اے ایس ائی کے لواحقین سے گہرے دکھ اور غم کا اظہار کرتے ہوئے شہید کے بیٹے کو نوکری دینے کا اعلان کیا۔