اِنَّا لِلّٰہِ وَاِنَّآ اِلَیْہِ رَاجِعُوْنَ کنسٹیبل اصغر علی فرض کی راہ میں شہید



اِنَّا لِلّٰہِ وَاِنَّآ اِلَیْہِ رَاجِعُوْنَ کنسٹیبل اصغر علی فرض کی راہ میں شہید تفصیلات کے مطابق مقبول اے ایس آئی معہ محمد بوٹا 3115، خضر حیات 684، عبدالجبار 2188 اور اصغر علی 4137 ملازمان قریب 5/28 بجیشام لڑائی جھگڑے کی کال پر بابر چوک گئے جہاں سے کالر عمران انہیں ساتھ لیکر اپنے گھر پہنچا جہاں ذیشان ولد ناصر مسلح پسٹل 30 بور نے علی شان ولد محمد رمضان کو یرغمال بنایا ہوا تھا پولیس پارٹی کودیکھتے ہی ذیشان نے فائرنگ شروع کردی جس سے علی شان اور ثمر عباس زخمی ہو گئے۔ پکڑنے کی کوشش کرنے پر ذیشان نے پولیس پارٹی پر بھی سیدھی جان لیوا فائرنگ کر دی جس سے اصغر علی کنسٹیبل مضروب ہو گیا جس نے حفاظت خود اختیاری کے تحت جوابی فائرنگ کی جس سے ذیشان بھی زخمی ہو کر گر پڑا۔زخمیوں کو سول ہسپتال پہنچایا گیا مگرکنسٹیبل اصغر علی راستہ میں ہی شہید جبکہ ملزم ذیشان ہلاک ہوگیا۔ وقوعہ کی اطلاع ملتے ہی اطہر اسماعیل سٹی پولیس آفیسر فیصل آباد شہید کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے ہسپتال پہنچ گئے۔ جہاں انہوں نے شہید کے اہل خانہ سے تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ شہید ہمارے ہیروز ہیں پولیس کو اپنے جوانوں کی قربانیوں پر ناز ہے جو اپنے لہو سے جرات کی عظیم داستانیں رقم کررہے ہیں